113

ساہیوال:ڈی ایچ کیوہسپتال کےلئےآنیوالی سی ٹی سکین مشین این جی او کو دینے کا حکم

ساہیوال: ڈی ایچ کیوو ٹیچنگ ہسپتال ساہیوال کے لئے آنے والی 7.5 کروڑ روپے کی سی ٹی سکین مشین ساہیوال میں بننے والے نئے رڈیالوجی ڈیپارٹمنٹ کی بجائے ایک این جی او کو دینے کی تیاریاں مکمل کر لی گئیں ۔ جبکہ مذکورہ این جی اوپہلے ہی ایک سی ٹی سکین مشین آپریٹ کر رہی ہے اور اس سلسلہ میں انکو ایک کروڑ پانچ لاکھ کی ادائیگی پہلے ہی کی جا چکی ہے اور ان پیسوں سے انہیں دس ہزار مریضوں کو 30 جون تک فری سی ٹی سکین دینا تھا جبکہ اب تک صرف 5500 مریضوں کا ہی سی ٹی سکین کیا جاسکا ہے اور مشین تین دفعہ خراب ہو چکی ہے جو اب بھی خراب ہے جس سے مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ان اعدادو شمار سے ان کی کار کردگی کو دیکھا جا سکتا ہے۔ایک اہم میٹنگ میں کمشنر ساہیوال بابر حیات تارڑ کی جانب سے ساہیوال میڈیکل کالج کے پرنسپل ڈاکٹر ظفر تنویر کو یہ حکم دیا بھی جا چکا ہے کے یہ مشین این جی اوکے سپرد کر دی جائے۔رڈیالوجی ڈیپارٹمنٹ کے ڈاکٹرز اورینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن نے اس اقدام کوہسپتال کے ساتھ زیادتی قرار دیا اور کہا ہے اربوں روپے کی لاگت سے ہسپتال کے نئے بلاک کی تعمیر مکمل ہونے کو ہے اور رڈیالوجی ڈیپارٹمنٹ بھی مکمل ہے تو اس مشین کو این جی اوکو دینے کی کوئی وجہ سمجھ نہیں آتی جبکہ این جی اوکی کاکردگی بھی سب کے سامنے ہے ۔مریضوں کے رش اور آنے والے وقت کی ضرورتوں کو مدِنظر رکھتے ہوئے اس مشین کونئے رڈیالوجی ڈیپارٹمنٹ میں لگانا وقت کی اہم ضرورت ہے ۔ رڈیالوجی ڈیپارٹمنٹ اوروائی ڈی اے نے اس فیصلے پر احتجاج کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ اگر اس فیصلے کو واپس نا لیا گیا تو احتجاج کا دائرہ وسیع کر دیا جائے گا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں